IS DŪBTE SŪRAJ SE TO UMMĪD HĪ KYĀ THĪ

Share This Post

Is Doobte Sooraj se To Umeed Hi Kya Thi
Hans Hans Ke Sitaaron Ne Bhi Dil Tod Diya Hai

MAHESH CHANDRA NAQSH

Is Doobte Sooraj se To Umeed Hi Kya Thi - Sad Poetry

spot_img

Related Posts

Baat Bey Baat Jo Bhar Aati Hain Aankhen Apni,

بات بے بات جو بھر آتی ہیں آنکھیں اپنی یاد...

Waqif-E-Gham, Mutabasam, Mutaqalam, Khamosh

واقفِ غم، متبسم، متکلم، خاموش تم نے دیکھی ہیں کہیں...

Kafan Mery Sar Say Utar Kay Khoob Didar Kar Lena Phir Kabhi

کفن میرے سر سے اُتار کے خوب دیدار کرلینا...

Parona Nahi Hamen Ankho May Intazar

پرونا نہیں ہمیں آنکھوں میں انتظار بس کہہ دیا نا!...

Hum To Ankhen He Dekh Kar Fana Ho Gaye Uski

ہم تو آنکھیں ہی دیکھ کر فنا ہو گئے...

Teri Ankhen Bata Rahe Hain Sab

تیری آنکھیں بتا رہی ہیں سب کیا ضرورت ہے مُسکرانے...
- Advertisement -spot_img