Home / Beauty Tips in Urdu / Home remedies for oily skin in Urdu | Chikni jild kay liye

Home remedies for oily skin in Urdu | Chikni jild kay liye

Home remedies for oily skin in Urdu | Chikni jild kay liye

Natural Solutions for Oily Skin in Urdu: (Chikni jild kay liye gharelu nuskhay):

Bohot zyada chikni jild (oily skin) ki hifazat karna khasa dushwar hai.Is kay liye aap ko har waqt tissue se chehre ko saaf rakhna parta hai. Ek munasib waqfay se chehre ko dhona bhi lazmi hota hai ta k aap ko koi tok na de aur apko bura lag jae. Chikni (oily skin) jild ka sab se bara sabab khandani bhi hota hai. Chand mufeed aur aazmoda desi nuskhay is masla ka kaar amad hal hai.

Nuskha # 1:
2 se 3 daane badaam len aur inhen acchi tarha pees len. Aadha chamach shehed mix karlen aur paste banalen. 15 se 20 minute tak is paste se chehre ka masaaj karen. Garam pani mai kapra dubo kar chehre ko saaf karlen phir pani se dho len aur chehra khushk karlen. Chikni jild (oily skin) kay liye ye intehai mufeed nuskha hai.

Nuskha # 2:
Ek piyali halka garam pani len aur is mai chamach ek chamach makai ka aata mix karlen aur paste banalen. Ab is paste se chehre pr amoodi daaiyray ki shakal 15 se 20 minute tak masaaj karen. Ab ise khushk hone den aur baad mai halke garam pani se chehra dholen aur khushk karlen. Ise baqaidgi se istemal karen.

Nuskha # 3:
Ek bottle pani main ek chamach khane ka namak milaen. Ise achi tarha mix karlen. Din mai baar baar ise jild kay chikne hisso par chirken. Ek hafte tak istemal karen. Chikni jild (oily skin) kafi had tak behter hojaegi.

Nuskha # 4:
Sirka ka istemal chikni jild (oily skin) kay liye intehai mufeed hai. ek piyali mai thora sa sirka len aur rui ki madad se ise chehre par lagaen agar aap ki jild sirka se hasaas hai to ek chamach sirka mai chaar chamach pani milaen aur ise rui ki madad se chehre par lagaen.  

Oily Skin Care Tips in Urdu
Skin Whitening Tips In Urdu For Oily Skin In Summer At Home
Oily Skin And Acne Care Tips in Urdu - Chikni Jild Ke Liye Gharelu Totkay
chikni jild ke liye mufeed gharelu totkay
oily jild ko khoobsurat banane ka tarika

 

Oily Skin And Acne Care Tips in Urdu, Chikni Jild Ke Liye Mufeed Gharelu Totkay, Oily Jild Ko Khoobsurat Banane Ka Tarika, oily skin tips, oily skin home remedies, oily skin ko khoobsurat banane ka tarika, beauty tips in urdu for skin, beauty tips for skin, beauty tips in urdu, beauty tips, oily skin k liye in urdu, oily skin k liye, oily skin ke liye gharelu totkay, chikni jild ke liye upay, beauty tips for oily skin, tips for oily skin, 

چکنی جلد کے لئے گھریلوں ٹوٹکے

بہت زیادہ چکنی جلد کی حفاظت کرنا خاصا دشوار ہے . اس کے لئے آپ کو ہر وقت ٹشو سے چہرے کو صاف رکھنا پڑتا ہے . ایک مناسب وقفے سے چہرے کو دھونا بھی لازمی ہوتا ہے تا کہ آپ کے کوئی ٹوک نہ دے اور آپکو برا لگ جاۓ . چکنی جلد کا سب سے بڑا سبب خاندانی بھی ہوتا ہے . چند مفید اور آزمودہ دیسی نسخے اس مسلہ کا کار آمد حل ہیں
 
نسخہ نمبر 1
دو سے تین دانے بادام لیں اور انہیں اچھی طرح پیس لیں . آدھا چمچ شید مکس کرلیں اور پیسٹ بنالیں .پندرہ سے بیس منٹ تک اس پیسٹ سے چہرے کا مساج کریں . گرم پانی میں کپڑا ڈبو کر چہرے کو صاف کرلیں پھر پانی سے دھو لیں اور چہرہ خشک کرلیں . چکنی جلد کے لئے یہ انتہائی مفید نسخہ ہے
 
نسخہ نمبر 2
ایک پیالی ہلکا گرم پانی لیں اور اس میں ایک چمچ مکی کا آٹا مکس کرلیں اور پیسٹ بنالیں. اب اس پیسٹ سے چہرے پر عمودی دایرے کی شکل 15 سے 20 منٹ تک مساج کریں . اب اسے خشک ہونے دیں اور بعد میں ہلکے گرم پانی سے چہرہ دھولیں اور خشک کرلیں . اسے باقائد گی سے استمال کریں 
 
نسخہ نمبر 3
ایک بوتل پانی میں ایک چمچ خانے کا نمک ملا یں . اسے اچھی طرح مکس کرلیں . دن میں بار بار اسے جلد کے چکنے حصّوں پر چھڑکیں . ایک ہفتے تک استمعال کریں چکنی جلد کافی حد تک بہتر ہوجاے گی
نسخہ نمبر 4
سرکہ کا استمعال چکنی جلد کے لئے انتہائی مفید ہے . ایک پیالی میں تھوڑا سا سرکہ لیں اور روی کی مدد سے اسے چہرے پر لگایں اگر آپ کی جلد سرکہ سے حساس ہے تو ایک چمچ تو ایک چمچ سرکہ میں چار چمچ پانی ملا یں اور اسے روی کی مدد سے چہرے پر لگا یں
 

Check Also

Uses and Benefits of Baking Soda in Urdu

Wednesday, October 18, 2017Uses and Benefits of Baking Soda in Urdu Baking Soda ko urdu …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *